PML-N Leader Siddique-ul-Farooq’s press conference (Eng+Urdu)

ISLAMABAD, Aug 29: Pakistan Muslim League (N) spokesman Siddiqul Farooq has appealed the Chief Justice of Pakistan Mr Iftikhar Mohammad Chaudhry to save the future of 68 students of Al Razi medical college, Peshawar.

Addressing a press conference here on Wednesday along the affected students, the PML-N spokesman  asked the Chief Justice to order immediate start of hearing appeal 1040/2011  filed by the students because it apparently concerns with the Human Rights. He pointed out that the last date for filing admission forms for the examination is 7th September, 2012 and the examination would start from 2nd October. He said if immediate hearing was not held, it would be a great injustice with the students.

The spokesman said that the students have been protesting in Peshawar and Islamabad in support of their demand but no body had paid any heed to their sufferings. He pointed out that after the passage of 18th amendment; education has been handed over to the Provinces. He also asked the Chief Minister, KPK Amir Haider Khan Hoti and the Provincial Education Minister to look into the grievances of the students who are running from pillar to post but nobody was ready to listen and redress their problem.

Replying to a question, he said that the students have made payments ranging from Rs5,75,000 to Rs 11,50,000 to the college as fee. He said they did so after the Islamabad High Court in July 2011 gave its verdict in favour of Al Razi college and allowed one hundred students to take admission.  He said after the court order these students
cannot be denied of appearing in the examination but because of red tapeism certain officials have made it an issue of their ego.

 

اسلام آباد(29اگست 2012)

 پاکستان مسلم لیگ(ن) کے مرکزی رہنماءمحمدصدیق الفاروق نے چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس افتخارمحمدچوہدری سے پرزوراپیل کی ہے کہ وہ اراضی میڈیکل کالج پشاورکے 68طلبہ اورطالبات کا مستقبل بچانے کےلئے سپریم کورٹ میں دائر

اپیل نمبر 1040/2011کی فوری سماعت کے احکامات جاری کریں ےہ اپیل انہوں نے آج ےہاں متاثرہ طلباوطالبات کے ساتھ ایک نیوزکانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کی ۔انہوں نے بتایاکہ فرسٹ پروفیشنل سال کے داخلے کی آخری تاریخ 7ستمبر اورامتحان کی تاریخ 2اکتوبرہے اگرچیف جسٹس آف پاکستا ن نے اس اپیل کی فوری سماعت نہ فرمائی تو ان طلبہ وطالبات کےساتھ ممکنہ ظلم کی تلافی نہیں ہوسکے گی ۔مسلم لیگ(ن) کے رہنماءنے کہاکہ ان طلبہ وطالبات کو پشاوراوراسلام آباد میں مظاہرہ کرتے ہوئے ایک ہفتہ ہوگیاہے لیکن ان کی شنوائی کہیں نہیں ہوئی ۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ 18ویں ترمیم کے بعد تعلیم کاشعبہ صوبو ںکے سپردکردیاگیاہے اس لئے صوبائی حکومت کو اس صورتحال کانوٹس لینا چاہیے ۔صدیق الفاروق نے وزیراعلی امیرحیدرہوتی اوروزیرتعلیم سرداربابک سے بھی اپیل کی کہ وہ ان بچوں کے مستقبل کو بچانے کے لئے فی الفوراپنا کرداراداکریں ۔ایک اورسوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ ان بچو ںنے 575000سے لیکر 1150000لاکھ روپے تک فیس ادا کررکھی ہے ۔انہوں نے بتایاکہ اسلا م آبادہائیکورٹ نے جولائی 2011میں اراضی میڈیکل کالج کے حق میں فیصلہ دیتے ہوئے اسے 100طلبا کو داخلہ دینے کی اجازت دی تھی اسی اجازت کے تحت اس کالج نے اکتوبر2011 تک طلباوطالبات کو داخلہ دیا۔اب ےہ طلبہ وطالبات ایک سال کی تعلیم حاصل کرنے کے بعد امتحانات دینے کےلئے تیارہیں لیکن سرخ فیتے اوربعض اعلی عہدیداروں کی منفی سوچ کی وجہ سے ان بچو ںکا مستقبل خدانخواستہ تاریک ہوسکتاہے ۔