Mushahidullah Khan on Qadri’s Objections on FIR.

طاہر لقادری اور عمر ان خان معاملات کو الجھانے کی بجائے بحران کے خاتمے میں تعاون کریں ۔سینیٹرمشاہداللہ خان
طاہر القادری کی جانب سے FIRکو مسترد کرنا نہایت ہی افسوس ناک ہے ۔سینیٹر مشاہداللہ خان
قانونی معاملات جلسوں اور مظاہروں میں طے کرنے کی بجائے عدالتوں اورقانونی عمل ہی کے نتیجے میں طے کئے جائیںتو بہتر ہوگا۔

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات سینیٹر مشاہداللہ خان نے کہا ہے کہ طاہر لقادری اور عمر ان خان معاملات کو الجھانے کی بجائے بحران کے خاتمے میں تعاون کریں ۔ انھوں نے کہا کہ طاہر القادری کی جانب سے FIRکو مسترد کرنا نہایت ہی افسوس ناک ہے ۔ مشاہداللہ خان نے کہا کہ قانونی معاملات جلسوں اور مظاہروں میں طے کرنے کی بجائے عدالتوں اورقانونی عمل ہی کے نتیجے میں طے کئے جائیںتو بہتر ہوگا۔ انھوں نے کہا کہ FIR در ج ہوچکی مدعیان اور گواہان کے بیانات کے بعد عدالت نئی دفعات بھی لگا سکتی ہے اور پہلے سے موجود دفعات کو ختم بھی کیا جاسکتا ہے ۔ مشاہداللہ خان نے کہا کہ بہتر ہوگا کہ اب جنگ عدالتوں میں اور آئین کے تحت لڑی جائے ۔ انھوں نے کہا کہ آج عدالت میں اپنا مقدمہ لڑے بغیر FIR مسترد کی جاتی ہے تو کل بغیر عدالتی چارہ جوئی کے FIRمیں موجود تمام افراد کی پھانسی کا بھی مطالبہ کیا جاسکتا ہے ۔ انھوں نے کہا کہ ہمارے خلاف FIRمیں بے بنیاد الزامات عائد کئے گئے ہیں اور بے قصور افراد کو نامزد کیا گیا ہے ۔ مشاہداللہ خان نے کہا کہ ہم واویلا نہیں مچائیں گے بلکہ عدالتوں میں جاکر اپنے خلاف مقدمات کا دفاع کریں گے انھوں نے کہا کہ لگتا ہے کہ یہ مطالبہ کر دیا جائے گا کہ FIR میں درج تمام ناموں اور شخصیات کو عدالتوں میں صفائی کا موقع بھی نہ دیا جائے ۔ مشاہداللہ خان نے کہا کہ امن کی خواہش رکھنے والوں کوامن اور دیانتداری کامظاہرہ تمام پہلوو ¿ں کو مدِنظر رکھ کر کرنا چاہیے ۔