Imran Khan loves rejected and turncoats, Senator Mushahidullah Khan

وزیر اعظم نواز شریف ملک سے بیروزگاری مہنگائی کے خاتمے اور بجلی بحران کے حل کیلئے اقدامات کر رہے ہیں، عمران خان ترقی کے عمل میں رکاوٹیں ڈال کر قوم کا وقت اور پیسہ برباد کر رہے ہیں۔ سینیٹر مشاہدا للہ خان
عمران خان کو صرف وزیر اعظم بننے کا شوق ہے ان کے پاس ملکی ترقی اور بحرانوں کے خاتمے کا کوئی وژن اور حل موجود نہیں۔مشاہداللہ خان
عمران خان وزیر اعظم نہ بن سکنے کا بدلہ خیبر پختونخواہ میں مینڈیٹ دینے والوں سے تو نہ لیں۔ مشاہداللہ خان
عمران خان دوسری جماعتوں سے مسترد شدہ لوگوں کو ساتھ ملا کر کوئی انقلاب برپا نہیں کر سکتے۔ سینیٹر مشاہداللہ خان
30 نومبر کو بھی کوئی نئی بات اور نیا لائحہ عمل نہیں آئے گا، وہی الزامات اور دوسروں پر کیچڑ اچھالنے کی پرانی مشق دہرائی جائے گی۔ مشاہداللہ خان

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے مرکزی سکرٹری اطلاعات سینیٹر مشاہداللہ خان نے کہا ہے کہ وزیر اعظم نواز شریف ملک سے بیروزگاری مہنگائی کے خاتمے اور بجلی بحران کے حل کیلئے اقدامات کر رہے ہیں، عمران خان ترقی کے عمل میں رکاوٹیں ڈال کر قوم کا وقت اور پیسہ برباد کر رہے ہیں۔انھوں نے کہا کہ عمران خان ثبوت پیش کرنے کا وعدہ کرتے ہیں اور وقت آنے پر فرسودہ الزامات دہرانے کے علاوہ ان کے پاس کچھ نہیں ہوتا۔ مشاہداللہ خان نے کہا کہ عمران خان کو صرف وزیر اعظم بننے کا شوق ہے ان کے پاس ملکی ترقی اور بحرانوں کے خاتمے کا کوئی وژن اور حل موجود نہیں۔مشاہداللہ خان نے کہا کہ اگر عمران خان کے پاس نئے پاکستان کی تشکیل کا کوئی ایجنڈا تھا تو اس کی تکمیل کیلئے خیبر پختونخواہ میں اقدامات کئے جا سکتے تھے، عمران خان وزیر اعظم نہ بن سکنے کا بدلہ خیبر پختونخواہ میں مینڈیٹ دینے والوں سے تو نہ لیں۔انھوں نے کہا کہ عمران خان دوسری جماعتوں سے مسترد شدہ لوگوں کو ساتھ ملا کر کوئی انقلاب برپا نہیں کر سکتے۔ سینیٹر مشاہداللہ خان نے کہا کہ عمران خان لوٹوں اور ابن الوقتوں کو ساتھ رکھ کر جو پاکستان بنائیں گے اس پر صرف اللہ کی پناہ ہی طلب کی جا سکتی ہے۔ انھوں نے کہا کہ30 نومبر کو بھی کوئی نئی بات اور نیا لائحہ عمل نہیں آئے گا، وہی الزامات اور دوسروں پر کیچڑ اچھالنے کی پرانی مشق دہرائی جائے گی۔ مشاہداللہ خان نے کہا کہ عمران خان ملک اور قوم کے ساتھ مخلص ہیں تو اسلام آباد کے جلسے میں دھرنوں اور انتشار کی سیاست کے خاتمے کا اعلان کر کے تمام تر توانائیاں عوام کی خدمت اور پارلیمنٹ میں تعمیری کردار ادا کرنے کا وعدہ کریں۔ انھوں نے کہا کہ حکومت نے عمران خان کو اسلام آباد میں جلسے کرنے کی اجازت دے دی، عمران خان اندر ہی اندر اس پر بھی ناراض ہیں۔ عمران خان اور ڈبل شاہ سمجھ رہے تھے کہ اجازت نہ ملنے سے سیاسی فائدہ مل سکتا تھا۔ مشاہداللہ خان نے کہا کہ عمران خان جلسے ضرور کریں لیکن ملکی مفاد ضرور مقدم رکھیں، ملک میں ترقی اور معیشت کی بحالی کا جو عمل شروع ہوا ہے اسے روکنے کی کوشش نہ کریں۔ انھوں نے کہا کہ کیا یہ اچھا نہیں ہوگا کہ آئندہ عام انتخابات میں عمران خان وفاق اور باقی تین صوبوں کے مقابلے میں نیا اور ترقی یافتہ خیبر پختون خواہ پیش کر کے اپنی اہلیت ثابت کریں۔ مشاہداللہ خان نے کہا کہ عمران خان بلدیاتی انتخابات کا رونا رونے کی بجائے خیبر پختونخواہ میں انتخابات کی تاریخ کا اعلان کریں۔انھوں نے کہا کہ الزامات لگانے کی بجائے ثبوت لے کر عدالتوں میں جائیں تاکہ دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہو سکے۔