Mushahidullah Khan on London plan and Cod.

میثاقِ جمہوریت کالندن پلان جیسے بدنامِ زمانہ معاہدے کے ساتھ تعلق جوڑنا ذہنی ناپختگی اور سیاسی بلوغت کا اظہار ہے۔سینیٹر مشاہداللہ خان
عوام ملک میں نفرت کے بیج بونے والے اور سیاست میں جھوٹ اور گالم گلوچ دینے والوں کو کبھی معاف نہیں کریں گے ۔ سینیٹر مشاہداللہ خان

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات سینیٹر مشاہداللہ خان نے کہا ہے کہ میثاقِ جمہوریت کالندن پلان جیسے بدنامِ زمانہ معاہدے کے ساتھ تعلق جوڑنا ذہنی ناپختگی اور سیاسی جہالت کا اظہار ہے ۔ انھوں نے کہا کہ میثاقِ جمہوریت ملک میںمثبت اور صحت مند جمہوری روایات کے فروغ اور جمہوریت کی مضبوطی کے لئے رہنما اصولوں کا تعین کرتا ہے جبکہ لندن پلان پاکستان کو عالمی سطح پر تنہا کرنے ، سیاسی انتشار ، و افرا تفری پھیلانے منفی وغیر جمہوری رویوں کی حوصلہ افزائی اور جمہوری نظام کے خاطمے کے لئے تیار کیا گیا ۔ مشاہداللہ خان نے کہا کہ میثاقِ جمہوریت ملک کی دونوں بڑی جماعتوں کی مقبول قیادتوں کے مابین مسلسل غورو خوض اور دونوں اطراف سے محب وطن اہل ِفکرو دانش کی مشاورت کے بعد طے پایا اور اس کا ایک ایک نقطہ عوام کے سامنے پیش کیا گیا ۔ انھوں نے کہا کہ میثاقِ جمہوریت پر ہونے والے مذاکرات اور اس کے تمام مراحل تاریخ کا ایک حصہ ہیں۔انھوں نے کہا کہ ان کی تمام تر تفصیلات شروع سے لے کر اس کی دسخطی تقریب تک میڈیا کے ذریعے عوام کے سامنے پیش کی جاتی رہیں ۔ مشاہداللہ خان نے کہا کہ لندن پلان شکست خوردہ سیاست دانوں ، پاکستان کے سیاسی و معاشی استحکام کے دشمنوں اور غیر ملکی طاقتوں کے ایما پر وجو د میں آیا جس کا ذکر پاکستان کے عوام ، میڈیا حتیٰ کہ ملک کے سیاستدانوں تک کے سامنے نہ کیا گیا۔انھوں نے کہا کہ لندن پلان کا حصہ بننے والے سیاستدان بشمول عمران خان اور طاہر القادری مسلسل ایسے کسی معاہدے اور ایک دوسرے سے ملاقاتوں سے انکاری رہے اور اب جبکہ یہ شرمناک منصوبہ عوام کے سامنے بے نقاب ہوچکاہے اس سے عوامی حقوق کے ضامن اور اس کی جدوجہد کے طور پر پیش کیا جا تا رہا ہے۔ ۔مشاہداللہ خان نے کہا اگر اس معاہدے کا واقعتا پاکستان کے عوام کی بہتری سے کوئی تعلق تھا تو خفیہ ملاقاتوں کی کوئی وجہ سمجھ میں نہیں آتی۔ چاہئے تو یہ تھا کہ ملاقاتیں بھی کھلے عام کی جاتیں اور عوامی بہتری کے مشترکہ نکات بھی عوام اور میڈیا کے سامنے پیش کئے جاتے ۔ انھوں نے کہا کہ آج ثابت ہوچکا ہے کہ مسئلہ نہ توعام انتخابات میں دھاندلی ہے اور نہ ہی کوئی انقلاب کسی کے پیشِ نظر ہے ۔ اصل حدف پاکستان میں ترقی کے عمل کو روکنا اور جمہوریت کا خاتمہ کرکے آمریت کی راہ ہموار کرنا ہے۔ مشاہداللہ خان نے کہا کہ عوام ملک میں نفرت کے بیج بونے والے اور سیاست میں جھوٹ اور گالم گلوچ دینے والوں کو کبھی معاف نہیں کریں گے ۔

PMLN rejects Qadri’s allegations of Nawaz’s forced acquittal from NaB cases

نوازشریف کے اقتدار میں آنے کے نتیجے میں 243نیب کیسز کے خاتمے کا بیان سفید جھوٹ اور شرانگیزہے ۔سینیٹر مشاہدا للہ خان
نواز شریف اور شریف خاندان پر جھوٹے مقدمات عمران اور قادری کے پیشوا جنرل مشرف نے قائم کئے۔ سینیٹر مشاہدا للہ خان
عمران اور قادری دونوں کو جمہوری نظام کے خاتمے کا جو مشن سونپا گیا تھا وہ ناکام ہو چکا ۔سینیٹر مشاہد اللہ خان

پاکستان مسلم لیگ (ن) کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات سینیٹر مشاہداللہ خان نے کہا ہے کہ نوازشریف کے اقتدار میں آنے کے نتیجے میں 243نیب کیسز کے خاتمے کا بیان سفید جھوٹ اور شرانگیزہے ۔ انھوں نے کہا کہ نوازشریف اور ان کے اہلِ خانہ پر جتنے بھی جھوٹے کیسز قائم کئے گئے ان کا سامنا عدالتوں میںکیا گیا۔ مشاہدا للہ خان نے کہا کہ نواز شریف اور شریف خاندان پر جھوٹے مقدمات عمران اور قادری کے پیشوا جنرل مشرف نے قائم کئے ۔ انھوں نے کہا کہ اگر ایک مقدمہ بھی درست ہوتا تو مشرف اور اس کے ہم نوا جج نوازشریف کو نہ چھوڑتے ۔ مشاہداللہ خان نے کہا کہ مشرف نے نوازشریف کے خلاف جھوٹے مقدمات کو درست ثابت کرنے کے لئے اربوں روپے خرچ کئے لیکن اللہ نے انہیں ایک ایک مقدمے میں سرخرو کیا اور مشرف کے ہاتھ کچھ نہ آیا ۔ انھوں نے کہا کہ آج بھی نوازشریف کا سب سے بڑا جرم مشرف کو قانون کے کٹہرے میں لا کھڑا کرنا ہے ۔ مشاہداللہ خان نے کہا کہ طاہرا لقادری قرآن سامنے رکھ کر غلط بیانی کرتے ہیں ۔ اللہ اور رسول کے نام کی مالا جاپنے والے شخص کے منہ سے جھوٹ نہیں جچتا ۔ انھوں نے کہا کہ سیاست اور سیاست دانوں کو بدنام کرنے کا عمل جمہوریت سے لوگوں کا اعتماد ختم کرنے کی سازش ہے۔ مشاہداللہ خان نے کہا کہ عمران اور قادری دونوں کو جمہوری نظام کے خاتمے کا جو مشن سونپا گیا تھا وہ ناکام ہو چکا ۔ انھوں نے کہا کہ جتناعرصہ دھرنے اور جھوٹی بیان بازی میں ضائع کیا گیا اس کے دوران یہ چاہتے تو تمام الزامات کی تحقیقات کر وا لیتے ۔ مشاہد اللہ خان نے کہا کہ حکومت عمران خان اور طاہر القادری کے ایک ایک الزام کی تحقیقات کروانا چاہتی ۔ انھوں نے کہا کہ اگر یہ دونوں حضرات اپنے لگائے گئے الزامات کو درست سمجھتے ہیں تو اِنہیں چاہئے متعلقہ اداروں کے سامنے پیش ہو کر ثبوت پیش کر یں۔ مشاہداللہ خان نے کہا کہ انتخابات میں دھاندلی ہی ان کا مسئلہ تھا تو یہ سب حکومت بھی کرنا چاہتی ہے ۔ انھوں نے کہا کہ عمران خان اور طاہرالقادری انتخابی عمل کو شفاف بنانے میں مخلص نہیں ۔ مشاہداللہ خان نے کہا کہ چین کے صدر کے دورے کو روک کر پاکستان کو ترقی اور دفاع کے بیشتر مواقعوں سے محروم کر دیا گیا ۔ انھوں نے کہا کہ دنیا بھر کے ماہرین دھرنوں کو معیشت کے لئے سمِ قاتل قرار دے چکے۔

PMLN spokesman on Imran Khan speech

عمران خان نے نوازشریف اور ان کے خاندان سے متعلق جو زبان استعمال کی ہے کسی سیاستدان اور شریف آدمی کی نہیں ،
عمران خان نے بدزبانی کی تاریخ رقم کرکے میانوالی کے وفادار اور غیرت مند لوگوںکے سرشرم سے جھکا دئیے
،جو شخص اپنے خاندان سے وفا نہ کرسکا قوم اس سے کیسے وعدوں کی پاسداری کی توقع کرسکتی ہے
عمران خان اپنے سیاسی مستقبل سے مایوس ہو کر سب پر کیچڑ اچھال رہے ہیں ،
عاصم خان ترجمان مسلم لیگ(ن)
اسلام آباد( )پاکستان مسلم لیگ(ن) کے ترجمان عاصم خان نے کہاہے کہ عمران خان نے نوازشریف اور ان کے خاندان سے متعلق جو زبان استعمال کی ہے کسی سیاستدان اور شریف آدمی کی نہیں ، کوئی خاندانی انسان عمران خا ن جیسی زبان استعمال نہیں کرسکتا- انہوںنے کہاکہ عمران خان کا ذاتی کردار جا کر میانوالی میں ان کے خاندان سے پوچھا جاسکتا ہے،عمران خان نے بدزبانی کی تاریخ رقم کرکے میانوالی کے وفادار اور غیرت مند لوگوںکے سرشرم سے جھکا دئیے – انہوںنے کہاکہ سیاست شریفانہ پیشہ ہے یہاں بدمعاشی کی گنجائش نہیں،عمران خان فطرتا” بے وفاشخص ہیں،عوام نوازشریف کی زبان سے بھی آگاہ ہیں اور عمران خان کا لب ولہجہ بھی ان کے سامنے ہے- ترجمان نے کہاکہ عمران خان بوکھلاہٹ میں اخلاقیات کی ہر حد پھلانگ چکے ،جو شخص اپنے خاندان سے وفا نہ کرسکا قوم اس سے کیسے وعدوں کی پاسداری کی توقع کرسکتی ہے- انہوںنے کہاکہ عمران خان کراچی جیسے شائستہ زبان بولنے والوں کے سامنے بھی اپنا بھرم قائم نہ کرسکے،مقابلہ گالی سے نہیں سیاسی میدان میں کیاجاتاہے-ترجمان نے کہاکہ عمران خان اپنے سیاسی مستقبل سے مایوس ہو کر سب پر کیچڑ اچھال رہے ہیں ،عمران خان اپنی بدزبانی اور اخلاقی گراوٹ کی وجہ سے ہی عوام کے ہاتھوں مسترد ہونگے-

Mushahid-ullah statement on Imran Khan

عمران خان نے یوم جمہوریت پر قانون اپنے ہاتھ میں لے کر جمہوریت اور سیاست کا چہرہ داغدار کرنے کی کوشش کی،جمہوریت میں قانون شکنی کا تصور بھی نہیں کیاجاسکتا،
جمہوریت قانون اور اداروں کے احترام سے عبارت ہے،عمران جو کچھ کر رہے ہیں ریاست کے خلاف ہے اسے حکومت کی مخالفت نہیں جاسکتا،
عمران خان کوحکومت اور ریاست دشمنی میں فرق کرنا چاہیے،تھانے پر دھاوا بول کر عمران خان نے قوم کے نوجوانوں کو کیا پیغام دیا؟
تھانے پر حملہ کرکے عمران خان نے قانون اور انصاف کی دھجیاں بکھیر کررکھ دیں ،
سینیٹر مشاہد اللہ
اسلام آباد( )پاکستان مسلم لیگ(ن) کے سینیٹر و مرکزی سیکرٹری اطلاعات مشاہد اللہ خان نے کہاہے کہ عمران خان نے یوم جمہوریت پر قانون اپنے ہاتھ میں لے کر جمہوریت اور سیاست کا چہرہ داغدار کرنے کی کوشش کی،جمہوریت میں قانون شکنی کا تصور بھی نہیں کیاجاسکتا-انہوںنے کہاکہ جمہوریت قانون اور اداروں کے احترام سے عبارت ہے،عمران جو کچھ کر رہے ہیں ریاست کے خلاف ہے اسے حکومت کی مخالفت نہیں جاسکتا-انہوںنے کہاکہ عمران خان کوحکومت اور ریاست دشمنی میں فرق کرنا چاہیے،تھانے پر دھاوا بول کر عمران خان نے قوم کے نوجوانوں کو کیا پیغام دیا؟ -سینیٹر مشاہد اللہ نے کہاکہ تھانے پر حملہ کرکے عمران خان نے قانون اور انصاف کی دھجیاں بکھیر کررکھ دیں –

PMLN Women wing Islamabad body announced

مسلم لیگ ن شعبہ خواتین اسلام آباد کے عہدیداران کی نامزدگیاں
اسلام آباد ( )پاکستان مسلم لیگ ن شعبہ خواتین کی مرکزی صدر سینٹر بیگم نزہت عامر نے مسلم لیگ ن اسلام آباد کی عہدیداران کی نامزدگی کر دی ہے۔رکن قومی اسمبلی فرحانہ قمر کومسلم لیگ ن شعبہ خواتین فیڈرل کیپیٹل کی صدر ،سعیدہ مشتاق نائب صدر اور کنیز زہرہ خان کو جنرل سیکرٹری نامزد کیا گیا ہے۔اسلام آباد رورل میں الماس امتیاز صدر، سلیقہ اورنگزیب نائب صدر اور ڈاکٹر حمیراسلیم کو جنرل سیکرٹری نامزد کیا گیا ہے ۔اسلام آباد سٹی میں صدر فرح اکبر،نائب صدر چاند بی بی،جنرل سیکرٹری رفعت عظیم ، جوائنٹ سیکرٹریز نگہت شہزادی ،افشاں طور اور ثمینہ عارف کو نامزد کیاگیا۔نصرت قادر کو اسلام آباد یوتھ ونگ کی صدر ،جبکہ ماہم کو اسلام آباد یوتھ ونگ کی جنرل سیکرٹری نامزد کیا گیا ہے۔یہ نامزدگیاں پاکستان مسلم لیگ(ن)شعبہ خواتین کے اجلاس میں ہوئیں جو پارٹی کے مرکزی سیکرٹریٹ اسلام آباد میں منعقد ہوااجلاس کی صدارت مرکزی صد ر سینٹر بیگم نزہت عامر نے کی ۔اس موقع پر خواتین ونگ کی مرکزی صدر نزہت عامر نے کہا کہ مجھے قومی امید ہے کہ نئی نامزد ہونے والی خواتین اپنی ذمہ داریاں نہایت احسن طریقے سے سر انجام دیں گی اور خواتین ونگ کی مضبوطی اور اس کو مزید فعال بنانے میں اپنا کردا ادا کریں گی ۔اسلام آباد شعبہ خواتین کی نو منتخب صدر فرحانہ قمر نے کہا کہ وہ اپنی تمام تر صلاحیتیں بروئے کار لاتے ہوئے خواتین ونگ اسلام آباد کو اس طرح فعال کریں گی کہ وہ اپنی پارٹی کے بہتر امیج اور خواتین کے پارٹی میں کردار کو درست انداز میں اجاگر کر سکیں ۔

Pakistan being ranked as least efficient innovator: Ahsan Iqbal

(Islamabad) Prof. Ahsan Iqbal, Federal Minister for Planning, Development & Reform has expressed great concern over Pakistan being ranked as least efficient innovator. He said, “In Knowledge Economy era, creativity and innovation are fundamental drivers of progress and prosperity and no country can afford to ignore innovation. Pakistan Vision 2025 aims at building new innovation foundations in economy for competitiveness. We are living in a very competitive world and being categorised as least efficient innovator is a very serious challenge which requires extra ordinary effort. Government has earmarked highest ever budget for higher education and scientific development geared towards strengthening academia and industry links. Government, private sector and academia partnership is being promoted to bring synergy in the efforts to transform the economy into a knowledge economy. Modern and complex economic challenges demand that nations pursue economic agendas with clarity and unity. Our future depends on competitiveness, human resource, exports, and innovation not on agitative darn as and politics.”

A new ‘Creative Productivity Index’ (CPI) developed by the Asian Develop­ment Bank (ADB) and Economic Intelligence Unit (EIU) has ranked Pakistan as the least efficient innovator. Pakistan is ranked 23rd with weaknesses in fostering a competitive business environment and it provides little incentive for firms to innovate, says the report.

According to the index, Myanmar and Cambodia have also been ranked as the least efficient innovators, while Japan and South Korea have been ranked as countries most efficient in the Asia and Pacific region at turning creative inputs into tangible innovation. Of those with lower creative inputs, Pakistan and Cambodia are less efficient at turning inputs into outputs.

The index uses 36 input indicators to measure the capacity and incentives for innovation, including how many global top 500 universities a country has, the urbanisation rate, spending on research and development, protection of intellectual property rights, and corruption and bureaucracy.

The eight output indicators to measure innovation include the number of patents filed, export sophistication, value added to agriculture, and the number of books and films produced.

The CPI aims to give policymakers a unique tool to measure progress in fostering creativity and innovation in 22 Asian economies along with the United States and Finland for comparison purposes. It measures the innovative and creative capacity of economies by relating creative inputs to outputs.

On the input side, creative productivity is measured on three dimensions: the capacity to innovate, incentives to innovate and how conducive the environment is to innovation. The output side measures innovations by considering both conventional indicators, such as the number of patents filed, as well as a broader set of measures of knowledge creation.

On innovation inputs alone, Singapore topped the rankings with strong political institutions, protection of intellectual property, and contract enforcement. Among Asian countries, Hong Kong, China topped the list in terms of innovation outputs due to a high level of export sophistication and its prolific film production industry.