Summary & text of the petition filed by the PML-N Leader Marvi Memon against PIA. (Urdu)

اسلام آباد (    )

پاکستان مسلم لیگ (ن) کی رہنماءماروی میمن نے سپریم کورٹ سے استدعا کی ہے کہ پی آئی اے انتظامیہ کی نااہلی اورکرپشن کی وجہ سے عوام الناس کا پی آئی اے جوکہ واحدقومی ائرلائن ہونے کی وجہ سے سفرکرنے میں اعتماد بری طرح مجروح ہواہے اورمزیدبراں عوام الناس کی زندگی کوبھی خطرات لاحق ہیں ۔انہوں نے سپریم کورٹ سے استدعا کی ہے کہ پی آئی اے کی موجودہ دگردوں صورتحال کوبہتربنانے کےلئے مدعاعلہیا ن کو طلب کرکے معاملے کی تحقیقات کرائی جائیں ۔ماروی میمن نے پی آئی اے کےخلاف سپریم کورٹ میں آئین کے آرٹیکل 183(3)کے تحت مفادعامہ کےلئے پیٹیشن دائرکی ہے جس میں سیکرٹری دفاع،وزارت دفاع،سابق وزیردفاع احمدمختار،ایم ڈی پی آئی اے،چیرمین پی آئی اے نویدقمرسلمان ،وزارت قانون وپارلیمانی اموراورسول ایوی ایشن کوفریق بنایاہے

ماروری میمن نے ےہ پیٹیشن مورخہ 12جولائی 2012ءکوکراچی ائرپورٹ پرپیش آنے والے واقعہ کوبنیادبناتے ہوئے سپریم کورٹ میں مذکورہ دائرکی ہے ۔پیٹیشن میں موقف اختیارکیاگیاہے کہ پروازپی کے 301ساڑھے چارگھنٹے تک کراچی ائرپورٹ پرتاخیرکاشکارہوئی تھی اوراس دوران 500سے زائد مسافرشدید ذہنی کوفت کاشکاررہے ۔اس موقع پرمسافر وں نے ماروی میمن کی سربراہی میں چیف جسٹس آف پاکستان سے معاملے کا نوٹس لینے کامطالبہ کیاتھا۔پیٹیشن میں مدعاعلیہاءنمبر 1مسڑنویدقمر،چیرمین پی آئی اے کاقومی اسمبلی میں مس کی گئی تاخیری پروازو ںکی تعداد کابھی حوالہ دیاہے جس میں نویدقمرنے اعتراف کیاتھاکہ گزشتہ 3ماہ کے عرصے میں 12184پروازوں میں سے 4345پروازیں تاخیرکاشکارہوئیں ،علاوہ ازیں مدعاعلیہاءنمبر2احمدمختارسابق وزیردفاع کے ایک نجی ٹی وی کودیئے گئے انٹرویو کا بھی حوالہ دیاگیاہے جس میں انہوں نے پی آئی اے کی کارکردگی کوشرم ناک قراردیاتھااوراس بات کا اعتراف کیاتھاکہ پی آئی اے میں بڑے پیمانے پرکرپشن کی جارہی ہے ۔پیٹیشن میں پی آئی اے کی گلگت بلتستان کی طرف جانیوالی پروازوں کی آئے روزخراب موسم کے نام پرمعطلی کوبھی انتظامیہ کی نااہلی اوربدعنوانی کاشاخسانہ قراردیاگیاہے ۔

EU delegation calls on PML-N leaders Raja Zafar-ul-Haq and Iqbal Zafar jhagra

A delegation of the European Union led by Michael Gahler, Member of the European Parliament met PML-N Chairman Raja Muhammad Zafar ul Haq and Secretary General Iqbal Zafar Jhagra in PML-N Secretariat at Islamabad to exchange views on holding of free and fair elections in Pakistan. The European Union delegation comprised of Mr. Pierre Mayandon Deputy head of delegation of the European Union in Pakistan, Mr. Eva Atanasova Development Advisor Government Democratisation and Michael Meyer Resende Executive Director of Democracy Reporting International (DRI).

Raja Zafar ul Haq after welcoming the delegation expressed his pleasure on the concern and role of European Union towards improving electoral process both in the 2008 elections and the forthcoming General Elections in Pakistan. He apprised the EU delegation of PML-N’s role for the stability of democracy and the party’s efforts for holding free and fair elections in meetings both at the parliamentary level, at government’s level and specifically with the Election Commission of Pakistan. PML-N is still continuing to ensure to find ways of establishing  accessible and reliable mechanism for updating and maintaining error free electoral rolls and complete transparency of the electoral process.

Mr. Michael Gahler leader of the delegation after expressing his thanks explained the purpose of their visit pertaining to key reforms for the forth coming general elections based on international covenant on civil and political rights (ICCPR) which Pakistan ratified in 2010. Mr. Gahler remarked that European Union and its Parliament desires development of democracy in other parts of the world and continue with their recommendations in the last elections (2008) and overcome the existing deficits including access of all stake holders to a neutral or objective institutions. He expressed his hopes that the election commission will find non partisan ways for holding free and fair elections and to settle all pre and post electoral disputes in the shortest possible time. They also stressed on establishing a conducive atmosphere and understanding between political parties and their workers in order to avoid violence in the electoral process.

PML-N Leader Siddique-ul-Farooq’s press conference (Eng+Urdu)

ISLAMABAD, Aug 29: Pakistan Muslim League (N) spokesman Siddiqul Farooq has appealed the Chief Justice of Pakistan Mr Iftikhar Mohammad Chaudhry to save the future of 68 students of Al Razi medical college, Peshawar.

Addressing a press conference here on Wednesday along the affected students, the PML-N spokesman  asked the Chief Justice to order immediate start of hearing appeal 1040/2011  filed by the students because it apparently concerns with the Human Rights. He pointed out that the last date for filing admission forms for the examination is 7th September, 2012 and the examination would start from 2nd October. He said if immediate hearing was not held, it would be a great injustice with the students.

The spokesman said that the students have been protesting in Peshawar and Islamabad in support of their demand but no body had paid any heed to their sufferings. He pointed out that after the passage of 18th amendment; education has been handed over to the Provinces. He also asked the Chief Minister, KPK Amir Haider Khan Hoti and the Provincial Education Minister to look into the grievances of the students who are running from pillar to post but nobody was ready to listen and redress their problem.

Replying to a question, he said that the students have made payments ranging from Rs5,75,000 to Rs 11,50,000 to the college as fee. He said they did so after the Islamabad High Court in July 2011 gave its verdict in favour of Al Razi college and allowed one hundred students to take admission.  He said after the court order these students
cannot be denied of appearing in the examination but because of red tapeism certain officials have made it an issue of their ego.

 

اسلام آباد(29اگست 2012)

 پاکستان مسلم لیگ(ن) کے مرکزی رہنماءمحمدصدیق الفاروق نے چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس افتخارمحمدچوہدری سے پرزوراپیل کی ہے کہ وہ اراضی میڈیکل کالج پشاورکے 68طلبہ اورطالبات کا مستقبل بچانے کےلئے سپریم کورٹ میں دائر

اپیل نمبر 1040/2011کی فوری سماعت کے احکامات جاری کریں ےہ اپیل انہوں نے آج ےہاں متاثرہ طلباوطالبات کے ساتھ ایک نیوزکانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کی ۔انہوں نے بتایاکہ فرسٹ پروفیشنل سال کے داخلے کی آخری تاریخ 7ستمبر اورامتحان کی تاریخ 2اکتوبرہے اگرچیف جسٹس آف پاکستا ن نے اس اپیل کی فوری سماعت نہ فرمائی تو ان طلبہ وطالبات کےساتھ ممکنہ ظلم کی تلافی نہیں ہوسکے گی ۔مسلم لیگ(ن) کے رہنماءنے کہاکہ ان طلبہ وطالبات کو پشاوراوراسلام آباد میں مظاہرہ کرتے ہوئے ایک ہفتہ ہوگیاہے لیکن ان کی شنوائی کہیں نہیں ہوئی ۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ 18ویں ترمیم کے بعد تعلیم کاشعبہ صوبو ںکے سپردکردیاگیاہے اس لئے صوبائی حکومت کو اس صورتحال کانوٹس لینا چاہیے ۔صدیق الفاروق نے وزیراعلی امیرحیدرہوتی اوروزیرتعلیم سرداربابک سے بھی اپیل کی کہ وہ ان بچوں کے مستقبل کو بچانے کے لئے فی الفوراپنا کرداراداکریں ۔ایک اورسوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ ان بچو ںنے 575000سے لیکر 1150000لاکھ روپے تک فیس ادا کررکھی ہے ۔انہوں نے بتایاکہ اسلا م آبادہائیکورٹ نے جولائی 2011میں اراضی میڈیکل کالج کے حق میں فیصلہ دیتے ہوئے اسے 100طلبا کو داخلہ دینے کی اجازت دی تھی اسی اجازت کے تحت اس کالج نے اکتوبر2011 تک طلباوطالبات کو داخلہ دیا۔اب ےہ طلبہ وطالبات ایک سال کی تعلیم حاصل کرنے کے بعد امتحانات دینے کےلئے تیارہیں لیکن سرخ فیتے اوربعض اعلی عہدیداروں کی منفی سوچ کی وجہ سے ان بچو ںکا مستقبل خدانخواستہ تاریک ہوسکتاہے ۔

Joint press conference of Siddiq-u-Farooq and Marvi Memon

پاکستان مسلم لیگ(ن) کی رہنماءمحترمہ ماروی میمن اورمحمدصدیق الفاروق کی مشترکہ پریس کانفرنس
اسلام آباد   (    )
پاکستان مسلم لیگ(ن) کی رہنماءمحترمہ ماروی میمن نے کہاہے کہ پاکستان مسلم لیگ(ن) ملک بھرمیں ہونے والی فرقہ وارانہ ٹارگٹ کلنگ جس کا مقصدپاکستان کو غیرمستحکم کرنااورمعیشت کو نقصان پہنچاناہے اس کی بھرپورمذمت کرتی ہے ۔وفاقی حکومت اورپیپلزپارٹی کی سندھ ،خیبرپختونخوا،بلوچستان اورگلگت بلتستان میں صوبائی حکومتیں مکمل طورپرامن وامان کی صورتحال قائم رکھنے میں ناکام ہوچکی ہیں ۔انہوں نے ان خیالات کا اظہار پاکستان مسلم لیگ(ن) کے مرکزی سیکرٹریٹ میں مسلم لیگ(ن) کے گلگت بلستستان کے چیف کورآرڈینیٹرمحمدصدیق الفاروق کے ہمراہ ایک پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔ماروی میمن نے کہاکہ وزیراعلی پنجاب محمدشہبازشریف نے دہشتگردی سے متاثرہ افرادسے اظہارےکجہتی کےلئے پاکستان بھرمیں ایک تعلیمی پیکیج کااعلان کیاہے جوکہ متاثرہ خاندانوں کے بچوں کو تعلیم دی جائے گی ۔ماروی میمن نے کہاکہ ےہ پہلا موقع نہیں ہے کہ پاکستان مسلم لیگ(ن) کے صدرمحمدنوازشریف اوروزیراعلی پنجاب شہبازشریف نے دہشتگردی سے متاثرہ اورقدرتی آفات سے متاثرہ افراد سے اظہارےکجہتی کا اظہارکیاہے بلکہ ماضی میں بھی ہم نے گللگت بلتستان ،خیبرپختونخوااورسندھ کے متاثرین سیلاب کےلئے بھرپوراقدامات اٹھائے ہیں ۔ماروی میمن نے کہاکہ اہل تشیع پرحملے دراصل ملک میں فرقہ وارانہ اہم آہنگی کو نقصان پہنچانے کی سازش ہے ،بلکہ ماضی قریب میں ےہ حملے اورپاکستان بھرمیں ٹارگٹ کلنگ ناقابل برداشت ہوچکے ہیں ۔ماروی میمن نے کہاکہ پاکستان مسلم لیگ(ن) کے قائدمحمدنوازشریف کی ہدایت کے مطابق پاکستان مسلم لیگ(ن) کی قیادت دہشتگردی اورفرقہ وارانہ فسادات سے متاثرہ خاندانوں سے مکمل اظہارےکجہتی کرتی ہے اورانکی امدادکےلئے ہراقدام اٹھائے گی ۔ماروی میمن نے کہاکہ ہم خصوصی طورپرکراچی میں ہونے والی ٹارگٹ کلنگ کی شدیدمذمت کرتے ہیں ،کراچی میں القدس ریلی پرحملہ ،اندرون سندھ او ربلوچستان میں ڈاکوراج ،ہندووں کے اغواءبرائے تاوان کی وارتیں ،کامرہ میں دہشتگردانہ حملے ،کوئٹہ میں ایف سی پربم حملے ،خیبرپختون خوا میں لالہ سرحملے ،عیدکے موقع پرگلگت میں سنیوں کے قتل کی بھرپورمذمت کرتے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ میں نے ان خاندانوںسے ملاقاتیں بھی کی ہیں جوکہ حکومت سے امن وامان کی صورتحال پرسوالات اٹھارہے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ حکومت پاکستانی عوام کوتحفظ دینے میں مکمل طورپرناکام ہوچکی ہے انہوں نے کہاکہ ہم ایسے تمام افرادجوکہ ابھی تک ایسے بڑے فرقہ وارانہ فسادات کاشکارنہیں ہوئے ہیں اوردہشتگردانہ حملوں کے باﺅجود امن قائم رکھے ہوئے ہیں ان علاقوں کے عوام ہمیشہ فرقہ وارانہ اہم آہنگی کے ساتھ رہتے ہیں اوران سے وعدہ کرتے ہیں کہ پاکستان مسلم لیگ(ن) کی حکومت ان کو مکمل تحفظ فراہم کرے گی
۔
Pmln strongly condemns incidents of targeted killings and sectarian killings all over Pakistan which are aimed at destabilising Pakistan and crippling our economy. We hold the federal government and provincial governments of Sindh, KP, Baluchistan and GB all equally responsible for the complete law and order failure.

To show solidarity with the terror victims CM Punjab has announced a education package which will give one child of victims family free education anywhere in Pakistan. This is not the first time the PMLN President and CM Punjab have demonstrated solidarity with terror victims and natural disaster victims. We have given in the past to flood victims of gb/kp/sindh also.

Attacks on Shias is a formidable conspiracy to destabilize sectarian harmony; it has reached unbearable levels in the recent past. And so have targeted killings against all innocents all over Pakistan. In line with our Quaid Mian Mohammad Nawaz Sharif’s instructions to pmln leadership I undertook a series of condolence visits to all provinces recently to reach out to the victims families.

We especially condemn the daily targeted killings of innocents in karachi, attacks in Karachi on al quds rally, the dakoo attacks in interior sindh, kidnappings of hindus in sindh and balochistan, attack on security installation kamra in attock, Quetta bomb blast on FC, lalusar attack in kpk, killing of Sunnis in gilgit on eid day. I have met with these families who are questioning government commitment to law and order significantly. This government has failed to protect all citizens of Pakistan especially minorities.

We laud the people of all these areas who have not fallen prey to the grand design of creating sectarian conflict and maintained peace despite such attacks by terrorists. The people of these areas always lived in sectarian harmony and we promise them complete security when pmln govt is in charge.

PML-N leader Siddiq farooq’s press conference

گلگت بلتستان کی صورتحال پر مسلم لیگ (ن) گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر کے چیف کو آرڈینیٹر محمد صدیق الفاروق کی پریس کانفرنس کا متن

اسلام آباد(23اگست 2012ئ)

 وزیر امور کشمیر ، مرکزی وزیر داخلہ اور وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان ، عید کے دن گلگت میں ہونے والے جانی نقصان اور شدید فرقہ وارانہ کشیدگی کے براہ راست ذمہ دار ہیں۔ اگر 27رمضان المبارک کو وادیئِ ناران میں لولوسر ٹاپ پر ہونے والے جانی نقصان پر گلگت بلتستان میں فوری اقدامات کئے جاتے تو جانی نقصان اور فرقہ وارانہ کشیدگی سے بچا جا سکتا تھا۔ یہ باتیں مسلم لیگ (ن) گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر کے چیف کو آرڈینیٹر محمد صدیق الفاروق نے جمعرات کو یہاں ایک نیوز کانفرنس میں خطاب کرتے ہوئے کہیں ۔

انہوں نے کہا کہ وزیر امور کشمیر ، وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان اور وفاقی وزیر داخلہ اس جانی نقصان اور کشیدگی کے اس لئے بھی براہ راست ذمہ دار ہیں کہ انہوں نے 24مئی 2012ءکو قانون ساز اسمبلی سے متفقہ طور پر پاس ہونے والے مسجد ریگولیشن ایکٹ پر عمل درآمد کرنے کےلئے کوئی عملی قدم نہیں اٹھایا ۔ صدیق الفاروق نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کے صدرمحمد نواز شریف کو اس صورت حال پر گہری تشویش ہے اور انہوں نے گلگت بلتستان کے صدر حافظ حفیظ الرحمن کو اس حوالے سے خصوصی ہدایات دی ہےں ۔انہوں نے بتایا کہ فرقہ وارانہ ہم آہنگی کےلئے مسلم لیگ(ن) گلگت بلتستان نے جناب محمد نواز شریف کی رہنمائی اور حافظ حفیظ الرحمن کی قیادت میں بھرپور کردار ادا کیا ہے اور وہ اب بھی اس راستے پر گامزن ہے لیکن حکومت ان کاوشوں کو نتیجہ خیز نہیں ہونے دے رہی ۔

ایک سوال کے جواب میں صدیق الفاروق نے کہا کہ وہ دو سال سے مسلسل وزارت امور کشمیر اور گلگت بلتستان حکومت کی توجہ دہشت گردی سے نمٹنے اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی پیدا کرنے کی طرف دلا رہے ہیں لیکن نااہلی کی وجہ سے یا اپنی ناکامیوں سے توجہ ہٹانے کےلئے پیپلز پارٹی کی مخلوط وفاقی اور گلگت بلتستان کی حکومتیں اپنی آئینی اور اخلاقی ذمہ داریوںکی طرف توجہ نہیں دے رہی۔انہوں نے کہا کہ اب تک 200قیمتی جانیں اس فرقہ وارانہ کشیدگی کی بھینٹ چڑھ چکی ہیں۔ ان کے نزدیک انسانی جان سے زیادہ اپنی حکومت کو بچانا اور اپنی ناکامیوں سے توجہ ہٹانا اہم ہے ۔ اور یہی وہ مجرمانہ رویہ ہے جس کی پاکستان اور گلگت بلتستان کی تمام سیاسی ، مذہبی اورسماجی طاقتوں کو نوٹس لینا ہے ۔انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ گلگت بلتستان میں موجود پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کے نمائندے واقعات کی رپورٹنگ کرتے ہوئے مزید احتیاط کا مظاہرہ کریں گے ۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) گلگت بلتستان کو شیعہ ، سنی ، اسماعیلی ، نوربخشی اور اہل حدیث سمیت تمام مکاتب فکر کا گھر سمجھتی ہے اور ان کے درمیان یگانگت کو فطری عمل سمجھتی ہے کیونکہ گلگت بلتستان کی ڈوگرہ راج سے آزادی میں تمام مکاتب فکر نے کامل یکجہتی اور اسلامی تعلیمات کے مطابق متحد ہو کر بھرپور کردار ادا کیا۔ اور ان تمام مکاتب فکر کے پیرو کار اس بات میں یقین رکھتے ہیں کہ گلگت بلتستان کے عوام کے جان و مال کا تحفظ اور اقتصادی اور سماجی ترقی کے لئے ان کا اتحاد ناگزیر ہے ۔

ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ مٹھی بھر شرپسندوں نے گلگت بلتستان میں نو گو ایریاز بنا رکھے ہیں اور بدقسمتی سے وفاقی اور گلگت بلتستان کی حکومت اپنے مخصوص مفادات کی وجہ سے نو گو ایریاز ختم نہیں کر رہی ۔ ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ گلگت کی جغرافیائی اور سیاسی حساس حیثیت کے پیش نظر وہاں فوج ، ایف سی ، پولیس اور حساس اداروں کی بھاری تعداد بجا طور پر موجود ہے۔لیکن افسوس ہے کہ اس کے باوجود گلگت کےچند مربع کلومیٹر علاقے میں سے دہشت گردی ختم نہیں کی جا سکی۔

 
— PRESS RELEASE

PML-N holds Ministers for Kashmir & Interior  and CM GB responsible for killings and sectarian tension in GB; GB Govt took no action against No go areas for its vested interests: Siddiqul Farooq

ISLAMABAD, Aug 23: Pakistan Muslim League(Nawaz) has held Ministers for Kashmir Affairs, Interior and Chief Minister Gilgit-Baltistan responsible for killing of innocent people and sectarian tension in Gilgit-Baltistan on the event of Eid ul Fitr. Addressing a press conference here on Thursday, PML-N’s Chief Coordinator for Gilgit-Baltistan and Azad Kashmir Mohammad Siddiqul Farooq said if immediate remedial measures had been taken after the Lalusar top incident, additional losses and sectarian tension could have been avoided.

He accused the Kashmir Affairs Minister and Chief Minister,Gilgit-Baltistan for not taking steps for implementation of the Mosque Regulation Act adopted with consensus by the Legislative Assembly on 24th May, 2012.

He said the PML-N President Nawaz Sharif was seriously concerned over the deteriorating situation in the area and has issued special directon to GB President of the Party Hafiz Hafeezur Rehman.  He pointed out that on the direction of Mian Nawaz Sharif, the PML-N has played special role for sectarian harmony in Gilgit-Baltistan. However he criticized the government for creating hurdles in the attempts of the PML-N to bring peace and order. In reply to a question, Siddiqul Farooq said he has been continuously drawing attention of the Ministry and the GB government  for dealing with terrorism and sectarian tension.  However due to its inefficiency or to divert attention of the people from its failures, the Federal and GB governments have not been paying attention towards their moral and constitutional obligations.

Siddiqul Farooq said so far 200 innocent people have lost their lives in sectarian tension but the local leadership was more interested in saving the government rather than the lives of the poor masses.  He said all the religio-political and social society must take notice of the criminal attitude of the provincial government.  He hoped that the print and electronic media would show greater responsibility in reporting the events in Gilgit-Baltistan.

To another question, the Chief Coordinator said the PML-N considers GB as collective home of Sunni, Shias, Ismailis, Noor Bakhshi and Ahle-e-Hadith and it was but natural that there must be harmony among them. He pointed out that all schools of thought played their collective role for independence from Dogra Raj. He said people of Gilgit-Baltistan believe that there was need for unity among them for economic and social development of the area.

In reply to yet another question, the Chief Coordinator said a handful of anti social elements have created  “ no go area” in Gilgit-Baltistan and due to its vested interests, the provincial government was not taking steps to eliminate these no go areas.

He said there is a heavy deployment of army, FC, police and intelligence agencies due to strategic location of the area but regretted that the menace of terrorism was not being rooted out in a few kilometer area.

Shahbaz for foolproof security on Eid

LAHORE: Punjab Chief Minister Shahbaz Sharif on Sunday issued instructions for making foolproof safety arrangements on the routes of metro bus project and directed authorities concerned to take all out protective measures within available resources to ensure safety of human lives.

He said that special measures should be taken for this purpose during Eid holidays.

Chairing a meeting to review safety arrangements on the routes of Metro Bus Project here, he announced financial assistance of Rs500,000 for the family of a woman, Farzana, who lost her life when she fell into a ditch recently and said that it was a tragic incident and everyone shares the grief of the bereaved family.

He directed that the routes of metro bus service should be made safe through evolving a comprehensive strategy for checking such incidents. He said that an awareness campaign should also be launched regarding the safety arrangements as well as the utility of metro bus project.

He directed the relevant quarters to ensure the presence of police and the staff of the departments concerned on the routes of metro bus project and said that a comprehensive framework of enforcement should be devised and the monitoring process should be made more effective for removing flaws.

He directed authorities concerned to show no laxity or negligence regarding the safety arrangements on the routes of metro bus project as no compromise could be made on the safety of human lives.

The Chief Minister also directed traffic police that a recorded message should be played on the routes of metro bus project again and again so that people could be apprised of the nature of work and the time frame. He said that special arrangements should be made for traffic management during Eid holidays so that citizens should not face any difficulty.

The Chief Minister said that software of metro bus project is being developed through which the time-frame of work would be given so that authorities concerned should know about the progress of the project on their computer.

He further directed that an effective planning should be made for work on the sideline roads on the routes of the project and the development work should be initiated on priority basis. Issuing instructions for identifying locations for giving parking facility to the passengers, he directed that the proposal of setting up a drop line for passengers should also be considered.

The Chief Minister directed that all services and facilities regarding metro bus project should be outsourced and the speed of work should be further accelerated for the early completion of the project.

Shahbaz said that metro bus service is a splendid project that would revolutionize transport system and result in provision of safe, comfortable and speedy traveling facilities to the masses.

Senator Pervaiz Rasheed, Parliamentarians, Mehr Ishtiaq and Hafiz Muhammad Nauman, and officers of departments’ concerned attended the meeting. (APP)

Iqbal Zafar Jhagra’s press conference


پاکستان مسلم لیگ(ن) کے سیکرٹری جنرل اقبال ظفرجھگڑا کی پریس کانفرنس 
اسلام آباد(   )
پاکستان مسلم لیگ(ن) کے مرکزی سیکرٹری جنرل اقبال ظفرجھگڑانے کہاہے کہ حکومت ہندو برادری کوبھارت ہجرت کرنے سے روکنے کےلئے اقدامات کرے۔انہوں نے کہاکہ حکومت کو اس معاملے میں پہلے سے نوٹس لیناچاہیے تھالیکن حکومت نے کوتاہی برتی۔اقبال ظفرجھگڑانے کہاکہ موجودہ حکمرانوں نے اس سلسلے میں برترین گورننس کی مثال پیش کی ہے ۔انہوں نے کہاکہ پیپلزپارٹی کے موجودہ دورحکومت میں کسی کی جان ومال محفوظ نہیںہے ۔اقبال ظفرجھگڑا نے کہاکہ ملک میں اقلیتوں کے علاوہ مسلمانوں کے ساتھ بھی اغواءکے واقعات پیش آرہے ہیں ۔انہو ںنے کہاکہ پاکستان مسلم لیگ(ن) اورصدرپاکستان مسلم لیگ(ن) محمدنوازشریف اقلیتوں کے ساتھ ہیں ۔اقبال ظفرجھگڑا نے کہاکہ لفظ اقلیتیں کا لفظ ہی ختم کردیناچاہیے ،ہم سب سے پہلے پاکستانی ہیں ۔انہو ںنے ان خیالات کا اظہارپاکستان مسلم لیگ(ن) کے مرکزی سیکرٹریٹ میں اقلیتی رکن اسمبلی ڈاکٹردرشن اوررکن قومی اسمبلی طارق فضل چوہدری کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اقبال ظفرجھگڑانے کہاکہ جب سندھ میں ہندوڈاکٹروں کوقتل کیاگیاتو اس وقت بھی پاکستان مسلم لیگ(ن) کے قائدمحمدنوازشریف ان کے خاندانوں سے اظہارےکجہتی کےلئے ان کے گھروں میں گئے تھے اوران کادکھ درد بانٹا تھا۔انہوں نے کہاکہ اگرہم قائداعظم محمدعلی جناح کے افکارکواپناتے توآج ہم کو ایسے واقعات نہ دیکھنے کوملتے ۔انہوں نے کہاکہ قائداعظم نے 11اگست 1947ءکو اس کے بارے میں ارشادات فرمائے تھے ۔اقبال ظفرجھگڑانے کہاکہ حکومت اقلیتوں کا تحفظ کرنے میں ناکام ہوچکی ہے ۔انہوں نے کہاکہ پاکستان میں ہرشخص کومذہبی اورسیاسی آزادی حاصل ہے اورقائداعظم کے ارشادات پرعمل کرنے سے ہی پاکستان کے مسائل کم ہوسکتے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ آج میڈیاآزاد ہے وہ اقلیتو ں کے حقوق کی حفاظت کےلئے بھی کردار اداکرے ۔اس موقع پرپاکستان مسلم لیگ(ن) کے اقلیتی رکن قومی اسمبلی ڈاکٹردرشن نے کہاکہ سندھ اوربلوچستان میں ہندووں کواغواءکیاجارہاہے ۔انہوں نے کہاکہ پہلے بڑے لوگوں کواغواءکیاجاتاتھا،پھربچوں کااغوا اورسیلاب کے دوران جولوٹ مارکی گئی تو ہندووں برادری نے ہجرت کاپروگرام بنالیالیکن جب پاکستان مسلم لیگ(ن) کے قائدمحمدنوازشریف نے سیلاب کے دوران صوبہ سند ھ کادورہ کیااوراقلیتوں کے ساتھ ےکجہتی کااظہارکرتے ہوئے ان کومکمل تحفظ فراہم کرنے کےلئے اقدامات کرنے کی ےقین دھانی کرائی۔ڈاکٹردرشن نے مزید بتایاکہ ہندوبرادری کوہجرت نہ کرنے کے بارے میں سمجھایاجس سے ہندووں نے ہجرت کرناختم کردیا۔انہوں نے کہاکہ جب بعد میں ہندولڑکیوں کو اغواءکرکے شادی کرکے عدالتوں میں پیش کیاجانے لگا۔انہو ںنے کہاکہ اس معاملے سے ملک کی دنیا بھرمیں بدنامی ہورہی ہے ،وفاقی اورسندھ حکومت نے ابھی تک اس سلسلے میں کوئی اقدام نہیں اٹھایاہے ۔انہوں نے کہاکہ ہم نے قومی اسمبلی میں تحریک التواءاورتحریک استحقاق جمع کرادیں ہیں ۔ایک سوال کے جواب میں اقبال ظفرجھگڑانے کہاکہ حکمران جماعت اپنے ایشوز پرتوجہ نہیں دے رہی ،ادارے تباہ ہورہے ہیں ،حکومت نے عدلیہ سے ٹکراﺅ کی پالیسی اپنارکھی ہے ۔انہوں نے کہاکہ پاکستان مسلم لیگ(ن) اورپوری قوم ہندووں کے ساتھ ہے اورانکے حقوق کی حفاظت کرے گی ۔اس موقع پررکن قومی اسمبلی ڈاکٹرفضل چوہدری نے کہاکہ سندھ میں پیپلزپارٹی کی حکومت ہے اوراس سلسلے میں اس پارٹی کے اراکین کے نام بھی لئے جارہے ہیں ،ایسے لوگوں کا ہندولڑکیوں کواغواءکرنالمحہ فکرےہ ہے ۔انہوں نے کہاکہ ہندووں کے عدم تحفظ کے خاتمے کےلئے ایک قانون بنانے کی ضرورت ہے ۔ڈاکٹرفضل چوہدری نے کہاکہ سندھ کے ایک رکن اسمبلی بھی ایسی ہی وجوہات کی بنیادپربھارت چلاگیاہے ۔جب اقبال ظفرجھگڑا سے نگران سیٹ اپ کے بارے میں سوال کیاگیاتوانہوں نے کہاکہ نگران حکومت کا معاملہ کھلے عام طے پائے گا ،20ویں ترمیم کے بعد نگران حکومت کاقیام کوئی مسئلہ نہیں رہاہے ۔انہوں نے ایک اورسوال کے جواب میں کہاکہ وزیراعظم کو عدالت میں پیش ہوجاناچاہیے ۔جب ان سے کپٹین صفدرکے معاملے کے بارے میں سوال کیاگیاتوانہو ںنے کہاکہ محمدنوازشریف کی واپسی کے بعد ےہ معاملہ خوش اسلوبی سے حل کرلیاجائے گا۔انہوں نے کہاکہ محمدنوازشریف کے فیصلے سے ثابت ہوگیاکہ محمدنوازشریف اصولوں کے سامنے کبھی بھی مصلحت کاشکارنہیں ہوتے ۔عمران خان کے 11سوالات کے بارے میں ان سے پوچھا گیاکہ توانہوں نے کہاکہ سلیمان شہباز ان سوالوں کے جوابات دے چکے ہیں ۔

Nawaz Sharif’s message on Independence Day

پاکستان مسلم لیگ(ن) کے قائدمحمدنوازشریف کا 14اگست کے موقع پرپیغام
      (     )
پاکستان مسلم لیگ(ن) کے صدرمحمدنوازشریف نے14اگست کے موقع پرقوم کو مبارکباد دی ہے اورقوم کو ےوم آزادی کی مبارکباد دیتے ہوئے کہاہے کہ 14اگست کا تاریخی دن ہمیں ان مقاصد کی ےاد لاتا ہے جن کے حصول کےلئے ہمارے بزرگوں نے قربا نیاں دیںاورلاکھوں لوگوں نے پاکستان کے قیام کوےقینی بنایا۔نوازشریف نے کہاکہ بانی پاکستان قائد اعظم محمدعلی جناح نے پاکستان کو ایک ایسی ریاست بنانے کا خواب دیکھاتھا جہاں پر قانون کی عمل داری ، انصاف کابول بالااورسب کو مساویانہ حقوق اورآگے بڑھنے کے ےکساں مواقع میسر ہوں ۔نوازشریف نے کہا قائداعظم محمدعلی جناح کے تصور پاکستان کے مطابق ایک ایسی ریاست کا تشکیل کرنا مقصودتھا جہاں پرتمام لوگ رنگ ،نسل اورعلاقائی تعصبات سے بالاترہوکر اخوت اوربھائی چارے کے جذبے کے ساتھ مل کرجئیں۔قائداعظم محمدعلی جناح نے 11اگست کو اپنی تقریر میں ےہ واضح کردیاتھاکہ پاکستان میں تمام مذاہب سے تعلق رکھنے والوں کوہرطرح کی مذہبی آزادی حاصل ہوگی اورانہیں زندگی کے تمام شعبوں میں ترقی کے ےکساں مواقع میسرہونگے۔بدقسمتی سے آج بعض ملک دشمن اورسازشی عناصرپاکستان میں رہنے والی اقلیتوں کے اندراحساس محرومی پیداکرکے مذہبی آزادی کا رکاوٹ کاباعث بن رہے ہیں جوکہ انتہائی افسوسناک امرہے ،ایساکرنااسلام ، بنیادی انسانی حقوق اورآئین پاکستان کی روح کے منافی ہے ۔پاکستان میں رہنے والے ہندو مذہب سے تعلق رکھنے والے شہرےوں اوردیگرمذاہب کے ماننے والوں کاپاکستان پراتناہی حق ہے جتناکہ کسی دوسرے شہری کا۔انہوں نے کہاکہ آج پاکستان اپنے رہنے والوں سے ایک بارپھر اسی کردار کاتقاضا کرتاہے جس کامظاہرہ ہمارے آباو واجداد نے اسے قائم کرتے وقت کیا۔آج وطن عزیز کو داخلی اورخارجی محاذپر متعدد چیلنجز کا سامناہے اوران چیلنجز سے عہدہ برا ہونے کےلئے ہم سب کو ملکر قیام پاکستان کا جذبہ لے کرکے ساتھ میدان عمل میں اترناہوگا۔ انہو ں نے کہاکہ چھ دہائیو ں کا عرصہ گزرجانے کے باوجود ہم دنیابھرمیں کشکول اٹھائے پھررہے ہیںجس کی بنیادی وجہ قومی مفادات کاعدم تحفظ ،مقاصدپاکستان سے روگردانی ،ملک کوچلانے کےلئے ترجیحات کادرست اندازسے تعین نہ کرنا،خوداحتسابی کے عمل کا فقدان اورملک میں باربار آئین کی پامالی ہے۔اسی بات کا نتیجہ ہے کہ آج ملک میں ترقی کا عمل رک چکاہے اوراس کے برعکس کرپشن نے ملک کی جڑیں کھوکھلی کردی ہیں اورملک میں معاشی بحران ختم ہونے میں نہیں آرہا ۔نوازشریف نے کہاکہ آج کا دن اس لحاظ سے بھی نہایت اہم ہے کہ اگلے سال اس دن سے پہلے ہمیں اس ملک کی باگ دوڑ سنبھالنے کےلئے ،عام انتخابات کے ذریعے نئی قیادت کا انتخاب بھی کرنا ہوگا۔ہمیں اپنے ووٹ کی طاقت کے ذریعے اس ملک کو ایک ایسی صاف ستھری قیادت مہیاکرناہوگی جس کے پاس مسائل سے نمٹنے کےلئے صلاحیت ،چیلینجز کا مقابلہ کرنے کےلئے مضبوط کرداراورہماری آئندہ نسلوں کے مستقبل کومحفوظ بنانے کےلئے ٹھوس اورواضح ویژن اورحکمت عملی موجود ہو۔آئندہ انتخابات میں عوام سوچ سمجھ کرووٹ دیں اورملک کی باگ دوڑ ایک ایسی قیادت کے سپردکریں جس کا ٹریک ریکارڈ ان چیلنجز اوربحرانوں کا مقابلہ کرنے کاگواہ بھی ہواورجس کے پاس مسائل کے حل کی اہلیت بھی موجود ہو۔نوازشریف نے کہاکہ دوادھورے ادوارمیں ہم نے عوام کی ریکارڈ خدمت کی اورانفراسٹریکچر،مواصلات اورہرشعبہ ہائے زندگی میں عوامی فلاح وبہبود کے ریکارڈ ترقیاتی کام کئے ،جس کااعتراف آج بھی اندرون ملک اوربیرون ملک کیاجاتاہے ۔انہوں نے کہاکہ عوام کی ترقی اورخوشحالی کے منصوبوں کاپورے ملک میں جال بچھادیں گے کیونکہ الحمداللہ ہمارے پاس ایک ایسی ماہرین کی ٹیم موجود ہے جوپاکستان کو قائداعظم کے تصورت کے مطابق ایک خوددار،خودمختاراورخوشحال مملکت بنانے کی صلاحیت اورعزم رکھتی ہے۔ہماراماضی گواہ ہے کہ ہم نے خالی خولی نعرے بجانے کی بجائے عملا وہ کچھ کرکے دکھایاجس کی مثال نہ ہم سے پہلے موجودتھی اورنہ ہی ہمارے بعدآنے والے کرسکے ۔ہماراعزم ہے کہااگراللہ نے چاہااورماضی کی طرح آئندہ بھی آپ نے ہمیں اپنے ووٹ کی طاقت کے ذریعے پوری قوت کے ساتھ ملک بھرمیں اپنا کرداراداکرنے کاموقع دیاتوہم داخلی اورخارجی محاذوں پرایسی پالیسیاں تشکیل دیں گے جس کے نتیجے میں ایک بارپھرہمارا شماردنیابھرمیں باوقارقوم کی حیثیت سے ہوگا۔آئیے ان مقاصدکی تکمیل کےلئے ہماراساتھ دیں ،ہم نے پہلے بھی آپ کے اعتمادکواپنے عمل کے ذریعے تقویت بخشی اورآج بھی ہمارا وعدہ ہے کہ ہمارااولین مقصدآپ کے ملک اوراس ملک کے ہرشہری کے مفادات کاہرسطح پرتحفظ کیاجائےگا۔۔پاکستان پائندہ باد

MushahidUllah Khan on Federal Govt’s contempt of Court policies

 
پیپلزپارٹی کی حکومت نے عوام کے مسائل حل کرنے کی بجائے اپنی تمام ترتوانائیاں کرپشن اورعدلیہ سے ٹکراﺅ پرصرف کررہی ہے،مشاہداللہ خان
 
زرداری حکومت نے مہنگائی،بے روزگاری ،غربت اورلوڈشیڈنگ جیسے سنگیں مسائل کو حل کرنے کےلئے گزشتہ چارسال میں کوئی اہم اقدام نہیں اٹھایا کہ ملک جن بحرانوں سے دوچارہے ان میں کمی لائی جاسکے ۔

 اعلی عدالتیں جب بھی حکومت کی کرپشن کی رقم قومی خزانے میں حکم دیتی ہے تو زرداری حکومت کے مشیرعدالتوں کو تنقید بنانا شروع کردیتے ہیں ۔انہوںنے کہاکہ حکومت کرپشن اس طریقے سے کرتی ہے کہ اس کامعاملہ عدالت میں پہنچے اورحکومت کو اقتدارمیں رہنے کے لئے مزید وقت مل سکے ۔
 
گورنرپنجاب کا ےہ کہناکہ پیپلزپارٹی نے کبھی بھی عدلیہ پرتنقید نہیں کی قوم سے کھلا مذاق ہے ،جس کی واضح مثال چیرمین نیب دیدارشاہ کی عدالت کے ذریعے نااہل ہونے پرپیپلزپارٹی نے ہڑتال کرادی تھی، عمران خان اورمشرف لیگ صدرزرداری کے مہرے ہیں،مرکزی سیکرٹری اطلاعات پاکستان مسلم لیگ(ن)
    (       )
پاکستان مسلم لیگ(ن) کے مرکز ی سیکرٹری اطلاعات سینیٹرمشاہداللہ خان نے کہاہے کہ پیپلزپارٹی کی حکومت نے عوام کے مسائل حل کرنے کی بجائے اپنی تمام ترتوانائیاں کرپشن اورعدلیہ سے ٹکراﺅ پرصرف کررہی ہے ۔انہوں نے کہاکہ حکمرانوں کے پاس ملک کی ترقی کےلئے کوئی ایجنڈانہیں کہ عوام کوریلیف مل سکے ۔مشاہداللہ خان نے کہاکہ پیپلزپارٹی اوراس کی اتحادی جماعتوں نے سیاست کواپنے مفادات میں تبدیل کردیاہے ۔انہوں نے کہاکہ زرداری حکومت نے مہنگائی،بے روزگاری ،غربت اورلوڈشیڈنگ جیسے سنگیں مسائل کو حل کرنے کےلئے گزشتہ چارسال میں کوئی اہم اقدام نہیں اٹھایا کہ ملک جن بحرانوں سے دوچارہے ان میں کمی لائی جاسکے ۔مشاہداللہ خان نے کہاکہ اب توحکومت کے اپنے ارکان پارلیمنٹ بھی وزراءکی کرپشن پرسراچااحتجاج ہیں لیکن آصف زرداری اوران کے ٹولے کواس کی کوئی پرواہ نہیں بلکہ عوام کو دن رات لوڈشیڈنگ برداشت کررہے ہیں اس کا بدلہ عوام عام انتخابات میں لیںگے جب پیپلزپارٹی اوراس کی اتحادی جماعتوں کے امیدواروں کی ضمانتیں ضبط ہوں گی۔مشاہداللہ خان نے کہاکہ اعلی عدالتیں جب بھی حکومت کی کرپشن کی رقم قومی خزانے میں حکم دیتی ہے تو زرداری حکومت کے مشیرعدالتوں کو تنقید بنانا شروع کردیتے ہیں ۔انہوںنے کہاکہ حکومت کرپشن اس طریقے سے کرتی ہے کہ اس کامعاملہ عدالت میں پہنچے اورحکومت کو اقتدارمیں رہنے کے لئے مزید وقت مل سکے ۔انہوں نے کہاکہ گورنرپنجاب کا ےہ کہناکہ پیپلزپارٹی نے کبھی بھی عدلیہ پرتنقید نہیں کی قوم سے کھلا مذاق ہے ،جس کی واضح مثال چیرمین نیب دیدارشاہ کی عدالت کے ذریعے نااہل ہونے پرپیپلزپارٹی نے ہڑتال کرادی تھی ۔مشاہداللہ خان نے کہاکہ حکمران جس طرح کرپشن کے نئے ریکارڈ قائم کررہی ہے اورعوام کے مسائل حل نہیںکررہے تو ایسی صورت میں عام انتخابات میں عوام کے پاس کس منہ سے جائیںگے ۔مشاہداللہ خان نے کہاکہ عمران خان اورمشرف لیگ صدرزرداری کے مہرے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ عوام باشعورہیں وہ حکمرانوں کی چالاکیوں کو سمجھ چکے ہیں ،اب پیپلزپارٹی اوراس کے اتحادیوں کوایسی شکست ہوگی جیسی شکست 1997کے انتخابات میں ہوئی تھی ۔مشاہداللہ خان نے کہاکہ عام انتخابات میں عوام دودھ کا دودھ اورپانی کا پانی کردیں گے۔